قومی علمی کمیشن
حکومت ہند
  


نئی
توانائ پورٹل ھنروستان کا
پانی کا پورٹل ھنروستان کا
نئی سفارشات

  زبان
  English
  हिन्दी
  বাংলা
  മലയാളം
  অসমীয়া
  ಕನ್ನಡ
  தமிழ்
  नेपाली
  মণিপুরী
  ଓଡ଼ିଆ
  ગુજરાતી
ہمارا تعارف

قومی علمی کمیشن کا تعارف

علمی اثاے کے استعمال اور اس کی تخلیق کی صلاحیت سے کسی بھی قوم کا اپنے شہریوں کو طاقتوربنانے اور انسانی صلاحیتوں میں اضافہ کرنے کے عزم کا اظہار ہوتا ہے- آئندہ چند دہائیوں میں دنیا میں سب سے زیادہ نوجوان افراد بھارت میں ہوں گے- علم کی بنیاد پر ترقی کی اس بساط سے ہندوسان کو اپنی آبادیاتی برتری قائم رکھنے میں مدد ملے گی- ہمارے وزیر اعظم کے الفاظ میں '' اب وقت آگیا ہے کہ ہم اداروں کو بنانے کی دوسری مہم اور تعلیم، تحقیق اور صلاحیت کی تعمیر شروع کریں، تاکہ اکیسویں صدی کا خیر مقدم بہتر طور پر کرسکیں

اس عظیم کام کو ذہن میں رکھتے ہوئے قومی علمی کمیشن کی تشکیل 13 جون 2005 کو کی گئ تھی- اس کی تشکیل 2 اکتوبر 2005 سے 2اکتوبر 2008 تک 3 برس کے لۓ کی گئی ہے- وزیراعظم ہند اعلی سطحی مشاورتی ادارے کے طور پر قائم کیے گئے قومی علمی کمیشن کے ذمہ پالیسی وضع کرنے اور زراعت، تعلیم، سائنس وتکنالوجی، صنعت، ای گورننس وغیرہ جیسے اہم شعبوں میں اصلاحات تجاویز کرنا ہے- علم ، علم کی تخلیق اور علمی نظآموں کو محفوظ کرنے کے طریقے، علم کی ترسیل اور بہتر علمی خدمات کمیشن کے اہم مقاصد ہیں-